اسلامی یونیورسٹی کے مرکز المنیرہ میں تحفیظ و تجوید کورسز کی تقریب انعامات و اسناد کا اہتمام
Published on: April 17th, 2018

بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کے مرکز دارالمنیرہ برائے تحفیظ القرآن کے زیر اہتمام حفظِ قرآن و تجوید اور دیگر تربیتی کورسز کی تقریب تقسیم اسناد اور انعامات جامعہ کے خواتین کیمپس میں منعقد ہوئی۔

پیر کے روز منعقدہ اس تقریب کے مہمان خصوصی جامعہ کے بورڈ آف ٹرسٹیز کے رکن اور مرکز المنیرہ کے بانی شیخ حمود الدیب تھے جبکہ اس موقع پر صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش سمیت ڈائریکٹر خواتین کیمپس ڈاکٹر فرخندہ ضیاءمرکز المنیرہ کی سربراہ محترمہ ساجدہ جمیل ،ڈین کلیہ اصول الدین ڈاکٹر ہارون الرشید اوردیگر اعلیٰ عہدیداران بھی موجود تھے۔

اپنے خطاب میں ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش نے کہا کہ قرآن کی تعلیمات میں عصر حاضر کے مسائل کا حل پنہاں ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ مرکز المنیرہ برائے طالبات جیسے مراکز مسلم معاشروں کی اشد ضرورت ہیں جو خواتین کی تربیت کے ساتھ ساتھ قرآنی تعلیمات کے احیاءکا کام بھی بخوبی کریں کیونکہ معاشرے میں مثبت تبدیلی کا یہی سب سے بڑا ذریعہ ہیں۔ صدر جامعہ نے شیخ حمود الدیب کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ یہ مرکز جسے شیخ حمود کی والدہ کے نام سے منسوب کیا گیا ہے وہ اس کے حلقات و افطار اور دیگر انتظامات میں بھی مدد کرتے ہیں جس پر جامعہ ان کی مشکور ہے۔

 

قرآن کریم کی تعلیمات کی نشرواشاعت میں کردار پر صدر جامعہ نے کلیہ اصول الدین کی خدمات کو بھی سراہا اور اس عزم کو دہرایا کہ اسلامی یونیورسٹی دینی و دنیاوی تعلیمات کے امتزاج سے نوجوانان امت کی تربیت کرتی رہے گی۔ تقریب سے کلیہ اصول الدین کے ڈین ڈاکٹر ہارون الرشید نے اپنے خطاب میں مرکز کے کردار اور مقاصد پر روشنی ڈالی ۔ مرکز کی انچارج ساجدہ جمیل نے اپنے خطاب میں بتایا کہ تحفیظ و تجوید اور تربیتی کورسز میں کل 700 سے زائد طالبات زیر تعلیم ہیں۔ پروگرام کے اختتام پر شیخ الدیب نے تحفیظ و تجوید میں پوزیشنیں حاصل کرنے والی طالبات میں انعامات تقسیم کیے۔

 

اسلامی یونیورسٹی اور آئسسکو کے مابین تعاون کے معاہدے پر دستخط
Published on: April 16th, 2018

امت مسلہ کی جامعات مشترکہ تعاون کے اقدامات پر توجہ دیں، ڈی جی آئسسکو ڈاکٹر التویجری

جامعہ کے ادارہ تحقیقات اسلامی کی طرف سے ڈاکٹر التویجری کو خصوصی سند دی گئی

بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی ، اسلام آباد اور اسلامک ایجوکیشنل سائنٹیفک اینڈ کلچرل آرگنائزیشن (آئسسکو) کے مابین دو طرفہ تعاون کے معاہدے پر دستخط کر دیے گئے ہیں جس کے تحت باہمی کاوشوں سے شعبہ تدریس ، تحقیق او رتربیت کے منصوبوں کو عمل میں لایا جائے گا۔

معاہدے پر دستخط کرنے کی تقریب جمعہ کے روز جامعہ کے فیصل مسجد کیمپس میں منعقد ہوئی جس پر آئسسکو کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر عبدالعزیز بن عثمان التویجری ، ریکٹر جامعہ ڈاکٹر معصوم یاسین زئی اور صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدیویش نے دستخط کیے۔

معاہدے کے تحت فریقین کانفرنسوں ، سیمینار، ورکشاپ اور تربیتی پروگراموں کے علاوہ جدید تحقیق اور سائنس کے پروگراموں کا آغاز کریں گے۔ معاہدے میں اس بات پر بھی اتفاق کیاگیا ہے کہ جامعہ اور آئسسکو مذاکرے کے ماحول کی ترویج اور اسلام کے پیغام اعتدال کو عام کرنے کے حوالے سے خصوصی اقدامات کریں گے۔اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے ڈاکٹر عثمان التویجری نے مسلم دنیا کی جامعات پر زور دیا کہ وہ باہمی تعاون کے لیے عملی اقدامات کریں ۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اسلامی یونیورسٹی مسلم دنیا کا اہم اثاثہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کچھ عناصر جامعہ کے بہترین مقاصد کے دشمن ہیں جو کہ دراصل پیغام امن کی ترویج نہیں چاہتے ۔ انہوں نے ڈاکٹر الدریویش کی خدمات کو سراہتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی انتھک کاوشوں کے ذریعے جامعہ اور مسلم دنیا کے مابین ایک پل کا کردار ادا کر وہے ہیں۔ انہوں نے اس امر کی یقین دہائی کرائی کہ وہ دنیا بھر کے فورمز پر جامعہ کو متعارف کرانے میں اپنا کردار ادا کریں گے ۔

اس موقع پر ریکٹر جامعہ کا کہنا تھا کہ اسلامی یونیورسٹی بین الاقوامیت کے ہدف پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے جس کی بہترین مثال حالیہ بورڈ آف ٹرسٹیز کا 13 واں اجلاس تھا جس میں مسلم دنیا کے مختلف ممالک کی نامور شخصیات موجود تھیں۔ ان کا کہنا تھا کہ 30 ہزار طلباءو طالبات جو کہ 40 ممالک سے تعلق رکھتے ہیں جامعہ کو ایک منفرد ادارہ بنا دیتے ہیں جو کہ مسلم دنیا کی تقدیر سنورار رہا ہے ۔

اس موقع پر ڈاکٹر الدریویش کاکہنا تھا کہ اسلامی یونیورسٹی ترقی کی منازل تیزی سے طے کر رہی ہے۔ انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ جامعہ کو دنیا کی بہترین درسگاہوں کی فہرست میں شامل کرنے کے لیے اقدامات جاری رکھے جائیں گے، انہوں نے بورڈ آف ٹرسٹیز اجلاس میں آمد پر ممبران اور انتظامیہ کی کاوشوں پر شکریہ بھی ادا کیا ۔

پروگرام میں ادارہ تحقیقات اسلامی کی جانب سے علمی دنیا میں تعلیم کے فروغ اور خدمات کے اعتراف مں ڈاکٹر التویجری کو خصوصی سند سے بھی نوازا گیا جبکہ جامعہ کے بورڈ آف ٹرسٹیز کے ایک اور ممبر شیخ حمود الدیب کو بھی ان کی خدمات کے اعتراف میں خصوصی سند سے نوازا گیا ۔ ادارہ تحقیقات اسلامی کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ضیا الحق نے جامعہ کی اعلیٰ قیادت کے ہمراہ اسناد پیش کیں۔ دریں اثنا بورڈ آف ٹرسٹیز ممبران نے ادارہ تحقیقات اسلامی کا بھی دورہ کیا اور فیصل مسجد میں نماز جمعہ ادا کی۔

 

اسلامی یونیورسٹی کے بورڈ آف ٹرسٹیز کا تیرہواں اجلاس، سربراہی صدر مملکت نے کی
Published on: April 16th, 2018

بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے بورڈ آف ٹرسٹیز کا تیرہواں اجلاس ایوان صدر میں ہوا جس کی سربراہی صدر اسلامی جمہوریہ پاکستان و چانسلر جامعہ ممنون حسین نے کی۔

جمعرات کے روز ہونے والے اس اجلاس میں چانسلر جامعہ و دیگر ممبران نے جامعہ سے متعلقہ کئی ایک اہم امور پر تبادلہ خیال کیا اور اس موقع پر جامعہ کی ترقی اور بہتری کے لیے تجاویز و ہدایات دیں۔

اجلاس میں وفاقی وزیر مذہبی امور سردار محمد یوسف، ڈائیریکٹر جنرل اسلامک ایجوکیشنل سائنٹفک اینڈ کلچرل آرگنایزیشن ( آیسسکو) ڈاکٹر عبد العزیز عثمان التویجری، چیرمین ہائیر ایجوکیشن کمیشن ڈاکٹر مختار احمد، سابق سربراہ اسلامی ترقیاتی بنک ڈاکٹر احمد محمد علی، جسٹس ریٹائرڈ خلیل الرحمان، جسٹس ریٹائرڈ فدا محمد خان، اکبر درانی، اسلامی نظریاتی کونسل کے چئرمین قبلہ ایاز، سیکرٹری پریذیڈنٹ سکریٹریٹ شاہدخان، اسلامی نظریاتی کونسل کے سابق چیرمین ڈاکٹرخالد مسعود، سابق سینیٹر رزینہ عالم خان، شیخ حمود بن عبداللہ الدیب، ڈاکٹر محمد السید عبدالرزاق الطبطبائی، ڈاکٹر عثمان یوسف جاسم الحجی، پروفیسر ڈاکٹر یوسف السید یوسف عامر (الازہر)، پروفیسر محمد عثمان الخوشت، احمد فارق، محبوب الہی، ڈاکٹر عباس عبداللہ سلیمان( الازہر)، ریکٹر جامعہ ڈاکٹر معصوم یاسین زئی، صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش اور نائب صدر جامعہ ڈاکٹر محمد منیر نے شرکت کی ۔

 

 دعوة اکیڈمی کے۹ویں کتاب میلے کا آغاز ہوگیا، 16اپریل تک جاری رہے گا
Published on: April 16th, 2018

 کتاب قوموں کی تقدیر بدل دیتی ہے، ڈی جی آئسسکو عثمان التویجری

 کتاب وعلم کے ذریعے ہی دہشت گردی اور تشدد جیسے رویوں سے چھٹکارا حاصل کیا جا سکتا ہے، ڈاکٹر الدریویش

 دعوہ اکیڈمی بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی ، اسلام آبادکے زیر اہتمام۹ ویں سالانہ کتاب میلے کا افتتاح ڈائریکٹر جنرل اسلامک ایجوکیشنل سائنٹیفک اینڈ کلچرل آرگنائزیشن (آئسسکو) ڈاکٹر عبدالعزیز عثمان التویجری اور صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش نے کیا ۔ اس موقع پر ڈائریکٹر دعوة اکیڈمی ڈاکٹر سہیل حسن اور یونیورسٹی کے اعلیٰ احکام بھی موجود تھے۔ کتاب میلہ 16 اپریل تک جاری رہے گا جس میں ملک بھر سے 50 سے زائد نامور پبلشرز نے اپنے سٹال سجائے ہیں اور کتب 50% رعایتی قیمت پر فروخت کی جا رہی ہیں۔

افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہو ئے عثمان التویجری نے کہا کہ کتاب قوموں کی تقدیر بدل دیتی ہے ۔ صدر جامعہ ڈاکٹر الدریویش نے کہا کہ علم کا حصول تمام مسلمانوں پر فرض ہے اور اس کے بنیادی ماخذ قرآن و سنت ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کتب انسان کی سماجی ،فکر ی اور معاشرتی تشکیل کرتی ہے اور انسانیت کی تکمیل کتاب سے ہی ممکن ہے۔ عصر حاضر کی جدیدیات نے انسان کو کتاب سے دور کر دیا ہے لیکن دعوة اکیڈمی کے اس کتاب میلے سے کتاب بینی کو فروغ حاصل ہو گاجو نئی نسل کے لیے ازحد ضروری ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مسلم معاشروں کو اس وقت منفی پراپیگنڈہ کا سامنا ہے ا ور اسلام کے درست پیغام امن کی ترویج کے لیے لازم ہے کہ مسلم معاشروں میں کتاب دوستی کا رحجان بڑھایا جاے ۔ ان کامزید کہنا تھا کہ کتاب اور علم ہی وہ ذرائع جن کے ذریعے دہشت گردی اور تشدد جیسے رویوں سے چھٹکارا حاصل کیا جا سکتا ہے۔ انہوںنے کتاب میلے کے انعقاد پر دعوة اکیڈمی کی کاوشوں کو سراہا اور ناشرین کو بھرپور تیاری کے ساتھ شرکت کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

قبل ازیں ،ڈاکٹر سہیل حسن نے اپنے افتتاحی کلمات میں تمام شرکاءاور ناشرین کو خوش آمدید کہا اور کتب میلے بارے تفصیلی بریفنگ دی۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے دین نے کتاب و قلم کی تعریف کی ہے اور علم ہی امت مسلمہ کا امیتاز ہے۔ انہوں نے کہا کہ دور حاضر میں کتاب دوستی اور مطالعہ کا رجحان کم ہورہا ہے۔ دعوہ اکیڈمی کا یہ کتاب میلہ کتاب کلچر کو فروغ دینے میں ممدو معاون ہوگا۔ کتاب شناسی سے ہی انسان نے مادی اور روحانی مدراج طے کیے ہیں ۔ آخر میں انہوں نے کتاب میلے میں عوام اور ناشرین کی پر جوش شرکت پر انہیں خراج تحسین پیش کیا۔

 

 

اسلامی یونیورسٹی ویب سائٹ پر اردو خبروں کا اجرا، افتتاح ڈاکٹر الدریویش نے کیا
Published on: April 10th, 2018

بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی نے اپنی ویب سائٹ پر اردو خبروں کا اجراءکر دیا جس کا افتتاح صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش نے کیا۔
پیر کے روز شعبہ تعلقات عامہ اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبہ جات کے سربراہان کی موجودگی میں ڈاکٹر الدریویش نے ویب سائٹ پر اردو خبروں کا افتتاح کیا اور کہا کہ ویب سائٹ پر اردو خبروں کی موجودگی دراصل صدر پاکستان ممنون حسین کی اردو زبان کے فروغ کی خواہش و ہدایت پر عمل کی ہی کڑی ہے جس کے تحت اب جامعہ کی ویب سائٹ پر انگریزی اور عربی کے بعد اردو خبریں بھی دستیاب ہوں گی۔ ڈاکٹر الدریویش کا مزید کہنا تھا کہ اردو زبان کے فروغ کے لیے مرحلہ وار کاوشیں جاری رہیں گی، صدر جامعہ نے کہا کہ شعبہ تعلقات عامہ اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی مشترکہ کاوشوں سے قلیل وقت میں ویب سائٹ پر اردو خبروں کی موجودگی ممکن بنائی گئی جو کہ دونوں شعبہ جات کے افسران و عملہ کی بہترین صلاحیتوں کی غماز ہے ۔ اس موقع پر شعبہ آئی ٹی کے سربراہ شکیل شاہ اور شعبہ تعلقات عامہ کے سربراہ ناصر فرید سمیت اسسٹنٹ ڈائریکٹرز محمد نعمان اعوان، الحسن ہارون اور شعبہ آئی ٹی کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر محمد عثمان بھی موجود تھے۔

 

اسلامی یونیورسٹی کے 27 ویں ثقافتی میلے نے بین الاقوامی ثقافتوں کے رنگ بکھیر دیے
Published on: April 9th, 2018

بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے 27 ویں ثقافتی تقریبات کا افتتاح سعودی سفیرعزت مآب نواف سعید المالکی نے یونیورسٹی کے ایچ 10 کیمپس میں کیا ۔ اس موقع پر چائینہ کے سفیر یوجنگ کے علاوہ کینیا ، تھائی لینڈ ، ترکی ، افغانستان، موریشس ، عمان ، یمن ، مصر اور صومالیہ کے سفراءسمیت صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش ، نائب صدور ، ڈینز،ڈائریکٹرز، اساتذہ اور طلباء کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سعودی سفیر نواف المالکی نے کہا کہ تعلیمی ادارے قوموں کے برادرانہ تعلقات کو فروغ دینے کے لیے بہترین کردار ادا کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 50 سے زائد مختلف ملکوں کے طلباءاسلامی یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ یہ طلباءپوری دنیا میں اسلامی یونیورسٹی کا پیغام امن و محبت پھیلارہے ہیں۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چائینہ کے سفیر یو جنگ نے کہا کہ دوستی قوموں کے تعلقات کو مزید بہتر بنانے کی بنیاد ہے ۔ انہوں نے چائینز طلباءپر زور دیا کہ وہ دوسرے ممالک کے طلباءکے ساتھ اچھے روابط قائم کرکے ثقافتوں کا تبادلہ کریں ۔ بین الاقوامی یونیورسٹی کے ریکٹر ڈاکٹر معصوم یٰسین زئی نے کہا کہ اس قسم کی تقریبات مختلف ممالک سے آئے ہوئے طلباءکے مابین ثقافتی ہم آہنگی روغ اور امن و رواداری کی فضا قائم کرنے کا باعث ہیں ۔ اسلامی یونیورسٹی میں 5 0 کے قریب ثقافتوں کا اکٹھا ہونای دنیا میں پاکستان اور اسلام کے تاثر کی بہتری میں اہم کردار ادا کریں گی۔

صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش نے کہا کہ یہ بین الاقوامی ثقافت کا حسین امتزاج ہے ۔ یونیورسٹی کے طلباء اسلامی بھائی چارہ کی تصویر ہیںاس قسم کی مثبت سرگرمیاں طلباءکی فکر ی آبیاری کے لیے کارآمد ہوتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہفتہ ثقافت اسلامی یونیورسٹی کی پہچان ہے اور یہ سرگرمی دنیا بھر کی جامعات میں بین الاقوامیت کا پیغام بنتی ہے ۔

قبل ازیں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مشیر طلباءڈاکٹر طارق جاوید نے مہمانوں کا اس ثقافتی میلے میں شرکت پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ثقافتی تقریبات طلباءکی صلاحیتوں کو مزید اجاگر کرنے میں نمایاں کردار کرتی ہیں۔ افتتاحی تقریب کے بعد مہمانوں نے طلباءکے سجائے گئے مختلف سٹالز کا دورہ کیا اور کثیر ممالک کی ثقافتوںکے خوبصورت سنگم کو دیکھ بہت متاثر ہوئے اور طلباءکی محنت کو سراہا۔ نمائش میں 40 ممالک کے سٹالز لگائے گئے تھے جن میں چائینہ ، سعودی عرب ، ترکی ، ملائشیا، افغانستان ، مصر، تھائی لینڈ ، انڈونیشیا، صومالیہ اور کئی دوسری ممالک کے سٹال شامل تھے جبکہ گلگت بلتستان، پنجاب ، خیبر پختونخواہ، سندھ ، بلوچستان، چترال اور آزاد جموں و کشمیرکے طلباءنے رنگا و رنگ سرگرمیوں میں اپنی ثقافت کا مظاہرہ کیا۔ ہفتہ ثقافت میں طلباءنے ثقافتی پریڈ ، کتاب میلہ ، پھولوں کی نمائش ، لیکچرز ، کھیل،مشاعرہ اور دیگر کئی سرگرمیوں کا انعقاد کا بھی کیا۔

 

مفتی اعظم مصر ڈاکٹر شوقی ابراھیم کی جانب سے پیغام پاکستان کی تائید
Published on: April 9th, 2018

اسلام ایک بین الاقوامی دعوت کا نام ہے، پیغام پاکستان میں اسلامی یونیورسٹی کاکردار متاثر کن ہے: ڈاکٹر شوقی

جامعہ میں منعقدہ سیمینار میں مفتی اعظم مصر سمیت،سردار یوسف، ریکٹر و صدر جامعہ اور دیگر نامور شخصیات کی شرکت

مفتی اعظم مصر ڈاکٹر شوقی ابراھیم عبدالکریم علام نے دہشت گردی کے خلاف پاکستان کے 18سو سے زائد علما کے متفقہ فتوے پیغام پاکستان کی تائید کرتے ہوے کہا ہے کہ ان کا ملک اتحاد امت کے لئے پاکستان کی کوششوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے،اسلام ایک بین الاقوامی دعوت کا نام ہے جس نے پہلی اور بعد میں آنے والی تہذیبوں کو اپنے ساتھ شامل کیا۔ انہوں نے پیغام پاکستان فتوے کے حوالے سے اسلامی یونیورسٹی کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی پاکستان میں امن کے قیام اور نوجونوں نسل کی ذہنی اور اخلاقی تربیت میں متاثر کن کردار ادا کر رہی ہے۔

وہ بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے ادارہ تحقیقات اسلامی، دعوہ اکیڈمی اور اقبال انٹرنیشنل ادارہ برائے تحقیق و مکالمہ کے زیر اہتمام ” پیغام پاکستان ” کے حوالے سے منعقدہ عالمی سیمینار سے خطاب کر رہے تھے۔ سیمینار میں وفاقی وزیر مذہبی امور سردار محمد یوسف، یونیورسٹی کے ریکٹر ڈاکٹر معصوم یاسین زئی، صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش، بہاءالدین زکریا یونیورسٹی ملتان کے وائس چانسلر ڈاکٹر طاہر امین پاکستان میں مصر کے سفیر، اراکین قومی اسمبلی،اور مختلف ممالک کے سفراءسمیت یونیورسٹی کے نائب صدور، افسران، اساتذہ اور طلبہ نے شرکت کی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر مذہبی امور سردار محمد یوسف نے کہا کہ پیغام پاکستان فتوے کو ملک بھر کے علماء اور مشائخ کی تائید حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزارت مذہبی امور اس بیانیے کو معاشرتی سطح تک فروغ دینے میں کردار ادا کر رہی ہے تاکہ ملک سے عدم برداشت، فرقہ واریت اور دہشت گردی کی سوچ کا خاتمہ ہو۔

یونیورسٹی کے ریکٹر ڈاکٹر معصوم یاسین زئی نے کہا کہ علماءنے انتہا پسندی کے خلاف پیغام پاکستان کے عنوان سے فتوی جاری کیا جو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں دستاویز کی حثیت رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلامی یونیورسٹی اسلامی اور سماجی علوم کے ساتھ ساتھ سائینس اور ٹیکنالوجی کے میدان کے ماہرین پیدا کر رہی ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بہاؤالدین ذکریا یونیورسٹی ملتان کے وائس چانسلر ڈاکٹر طاہر امین نے کہا کہ سیکورٹی فورسز اور عوام نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جانوں کے نذرانے پیش کئے اب ضرورت ہے کہ پیغام پاکستان کے ذریعے رواداری کو فروغ اور پر امن معاشرے کے قیام کے لئے کردار ادا کیا جائے۔

صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش نے کہا کہ اسلام تمام مذاہب سے رواداری اور میانہ روی کا درس دیتا ہے تاکہ مستحکم معاشرہ وجود میں آئے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اقلیتوں کے حقوق کا خیال رکھنا چاہیے تاکہ ملک میں رواداری کی فضاءقائم ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ اسلامی یونیورسٹی معاشرے میں اپنے اسی کردار کی بدولت قائم ہے۔

تقریب میں ریکٹر اور صدر جامعہ نے ڈاکٹر شوقی ابراھیم عبدالکریم علام اور ڈاکٹر طاہر امین کو اعلی تعلیمی خدمات اور معاشرے میں اعتدال پسندی کے فروغ کے لیے کوششوں پر اعلی تعلیمی ایوارڈ بھی دیے۔

تقریب سے رکن قومی اسمبلی روبینہ عالم، ڈائریکٹر جنرل ادارہ تحقیقات اسلامی ڈاکٹر ضیاءالحق اور دعوہ اکیڈیمی کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر سہیل حسن نے بھی خطاب کیا۔سیمینار سے قبل مفتی اعظم مصر ڈاکٹر شوقی ابراھیم عبدالکریم علام نے ادارہ تحقیقات اسلامی کی تاریخی گیلری کا دورہ کیا اور یوم پاکستان کی مناسبت سے کتب نمائش کا افتتاح کیا۔

 

میانہ روی حق کا دوسرا نام ہے اور شریعت بھی اسی چیز کا درس دیتی ہے، امام کعبہ
Published on: March 19th, 2018

امام کعبہ صالح بن محمد آل طالب نے کہا ہے کہ میانہ روی حق کا دوسرا نام ہے اور شریعت بھی اسی چیز کا درس دیتی ہے تاہم میانہ روی سے مراد شریعت میں تخفیف نہیں ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کی شام بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کے فیصل مسجد کیمپس میں ’قرآن و سنت کی روشنی میں میانہ روی کی ترویج و اشاعت : پاکستان اور سعودی عرب کا کردار“ کے موضوع پر منعقدہ سیمینار کی صدارت کرتے ہوئے کیا ۔ امام حرم نے اپنی تقریر میں پاکستان کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے پاکستان ایک ایٹمی طاقت ہے اور پوری امت مسلمہ کے لیے باعث فخر ہے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کی افرادی قوت کا امت مسلمہ کی ترقی میں کردار مثالی ہے اور پاک سعودی تعلقات بے مثال اور مضبوط ترین ہیں ۔ انہوں نے بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کی امت مسلمہ کے لیے خدمات کو بھی سراہا اور اسلام کے پیغام امن کی ترویج کے لیے جامعہ کے اقدامات کی بھی تعریف کی ۔ اس موقع پر بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کے ریکٹر ڈاکٹر معصوم یٰسین زئی نے امام کعبہ کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ سعودی تعاون نے اس یونیورسٹی کو حقیقی معنوں میں ایک بین الاقوامی جامعہ بنا دیا ہے ۔ جس میں سعودی سفیر نواف المالکی اور صدر جامعہ ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش کا کردار کلیدی ہے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستانی عوام سعودی عرب کے لیے اپنے دلوں میں بے پناہ محبت رکھتے ہیں اور امام کعبہ کا والہانہ استقبال اس کی واضح مثال ہے ۔ سیمینار میں اظہار خیال کرتے ہوئے صدر اسلامی یونیورسٹی ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش نے کہا کہ عصر حاضر کا تقاضا ہے کہ دین اسلام کے میانہ روی کے پیغام کو عام کیا جائے اور سعودی حکومت کی اس ضمن میں خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں کیونکہ سعودی حکومت دراصل لادینیت ، الحاد اور انتہا پسندی کی روک تھام کے لیے میانہ روی اور امن کے پیغام کی سب سے بڑی داعی ہے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ حرم مکہ کے ائمہ کی علمی ،دینی ، مادی اور معنوی خدمات مثالی ہیں اور سعودی حکومت کے وژن کی عکاس ہیں ۔ ڈاکٹر الدریویش نے اپنی خطاب کے آخر میں یونیورسٹی کی جانب سے میانہ روی کی ترویج و اشاعت کے لیے کیے گئے اقدامات کے حوالے سے بھی تفصیلی تذکرہ کیا۔ اس پروگرام میں سعودی عرب کے سفیر نواف المالکی سمیت دیگر ممالک کے سفارت کار ، نامور مذہبی و سماجی شخصیات اور اسلامی یونیورسٹی کے نائب صدور و طلبہ و طالبات بھی شریک تھے۔

قبل ازیں امام کعبہ نے فیصل مسجد میں نماز مغرب کی امامت کی اور اس موقع پر امت مسلمہ کی ترقی کی دعا کی اور پاک سعودی تعلقات کو مثالی اور مضبوط ترین قرار دیا ۔

 

آرکائیو